Wednesday , August 10 2022

ایرانی اور آرامکو حملوں میں استعمال ہونے والے طیاروں میں مماثلت کا دعویٰ

ایران کا طرز عمل،حملوں کی تاریخ ،دہشت گردی کی پشت پناہی ایرانی معیشت کی تباہی کا اصل سبب ہے،ٹرمپ انتظامیہ
لندن(اعتماد نیوز)برطانوی خبررساں ادارے نے بتایا ہے کہ سعودی عرب کی سب سے بڑی آئل کمپنی آرامکو کی تنصیبات پرمبینہ ایرانی حملوں کو کئی ماہ گذر گئے ہیں مگر ان حملوں کے حوالے سے حقائق ابھی تک سامنے آ رہے ہیں۔برطانوی خبررساں ادارے کی طرف سے جاری کردہ ایک امریکی رپورٹ میں اس امر کی تصدیق کی گئی کہ آرامکو تنصیبات پرحملوں کے لیے استعمال ہونے والے طیاروں اور ایرانی طیاروں میں غیرمعمولی مماثلت موجود ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ہتھیاروں کے ملبے کے تجزیے سے ظاہر ہوا ہے کہ آرامکو کی تنصیبات کو نشانہ بنانے کے لیے ڈرون طیارے شمال سے آئے۔ نیز یہ کہ اس مفروضے کے مزید شواہد اور دلائل موجود ہیں۔تاہم امریکی رپورٹ میں حتمی طور پراس حملے کے منبع کا انکشاف نہیں کیا گیا ۔ٹرمپ انتظامیہ کے ایک سینئر عہدیدار نے اس رپورٹ کے نتائج پر براہ راست کوئی تبصرہ نہیں کیا لیکن کہا کہ ایران کے طرز عمل، اس کی دہائیوں پر پھیلی تباہ کن حملوں کی تاریخ اور دہشت گردی کی پشت پناہی ایرانی معیشت کی تباہی کا اصل سبب ہے۔


About

Skip to toolbar